After Imam Ali a.s and Hazrat Fatima s.a, it’s Imam Mahdi’s trurn now

11402810_10153436870819859_8152551524033488926_n

Abusing holy personalities of Shia and Sunni Sufi Muslims is a norm now. After Beena Sarwar’s Assistant ‪#‎Ilmana_fasih‬ Deobandi abused Imam Ali and Hazrat Fatima, Beena’s wannabe frontman in Karachi Anwar Durrani aka Ali Arqam abuses Imam Mahdi a.s comparing him with Takfri Deobandi terrorist Mullah Omer, alleging that Imam Mahdi too fled from the battlefield.

It seems that Shia Muslims, a genocide facing community in Pakistan, should now get used to frequent abuses to their revered personalities by Deobandi bigots sponsored by the Beena Sarwar lobby.

بینا سرور لابی کی جانب سے آئمہ اطہار پر گالم گلوچ و سب و شتم کا سلسلہ جاری۔ المانہ فصیح کے بعد بینا سرور کے دوسرے فرنٹ مین اکرم درانی عرف علی ارقم امام مہدی علیہ السلام کی شان میں گالم گلوچ و الزام تراشی پر اتر آئے اور امام مہدی کی غیبت کبری کو نعوذ باﷲ من ذالک افغان طالبان کے لیڈر ملا عمر کے میدان جنگ سے فرار اور بھاگنے سے متماثل قرار دینے لگے۔ امام مہدی کے لیئے بعینہ یہی الفاظکالعدم تکفیری دیوبندی دہشتگرد گروہ کا سرغنہ اعظم طارق استعمال کرتا رہا۔

انور درانی عرف علی ارقم م لگتا ہے ابھی تک اپنی تکفیری دیوبندی فکر سے پیچھا نہیں چھڑا سکے اور نہ ہی اتنے عرصے میں اسلامی تاریخ کی مبادیات کا علم حاصل کر سکے ورنہ ان کو معلوم ہوتا ہے میدان جنگ سے فرار اور بھاگنا اور بات ہے اور حکم خدا سے لوگوں کی نظروں سے اوجھل ہونا اور۔ رسول مکرم صلی ﷲ علیہ و آلہ وسلم بھی حکم خدا سے غار میں چھپ گئے تھے، اس سے پہلے حضرت عیسی بھی بحکم خدا آسمان پر اٹھا لیئے گئے۔

یہ دونوں مواقع اس وقت کے ہیں جب دشمنان خدا ان دونوں مقدس رسولوں کو قتل کرنے کے درپے تھے اور خدا نے ان کو لوگوں کی نظروں سے اوجھل کر کے اپنی مشیئت اور ارادے کے مطابق ان کی حفاطت کا بندوبست کیا ورنہ خود یہ نمائندے الہی ﷲ کی راہ میں جان قربان کرنے سے بالکل بھی دریغ نہیں کرتے۔ بالکل ایسے ہی ﷲ نے اپنی آخری حجت کی حفاطت کا انتظام کیا اور ان کو لوگوں کی نظروں سے اوجھل کر دیا جیسے حضرت عیسی کو قیامت کے قریب تک اوجھل کیا ہوا ہے، جیسے اصحاب کہف اور حضرت خضر کو لوگوں کی نظروں سے پوشیدہ رکھا ہوا ہے۔

باقی میدان جنگ سے فرار اور ملا عمر کی طرح میدان جہاد سے بھاگنے کی مکمل تاریخ پڑھنے کے لیئے علی ارقم صاحب غزوہ احد، غزوہ خیبر اور غزوہ حنین کی طرف مراجعت کر لیتے تو ملا عمر سے اسم کے علاوہ دیگر کئی حولوں سے مماثلت رکھنے والے ناموں کا انکشاف ہو جاتا۔ ہم اتحاد اسلامی کو برقرار رکھنے کے لیئے ان کرداروں اور ناموں کے سامنے لانے سے گریز کرتے ہیں۔

یہاں ہم علی ناطق سے بھی مطالبہ کرتے ہیں کہ اپنے اس دوست اور اسسٹنٹ اکرم درانی عرف علی ارقم کے ان نازیبا کلمات کی کھل کر مذمت کریں نہیں تو ہم کو بتا دیں کہ ان کا گروپ روشنی اب کالعدم تکفیری دیوبندی دہشتگرد گروہ کے غنڈوں کو امن کا داعی بنا کر پیش کرنے لگا ہے اور ان تکفیری عناصر کی، جنھوں نے لبرل ازم کا چوغہ پہن رکھا ہے، پشت پناہی کر رہا ہے۔

Source:

https://www.facebook.com/aqeel.gharavi/photos/a.423270214858.212252.335285829858/10153436870819859/?type=1

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *